Thursday, 17 October 2019
/ کالمز / اسماء طارق / پاکستان میں خوراک کے مسئلے کا حل

پاکستان میں خوراک کے مسئلے کا حل

اقوام متحدہ کے مطابق، حالیہ برسوں میں پاکستان اضافی غذا رکھنے والا ملک بن گیا ہے، جو گندم اور چاول کو بڑے پیمانے پر پیدا کرتا ہے۔ اقوام متحدہ کے مطابق اچھی پیداوار کے مسلسل تین سالوں کی وجہ سے خوراک کی دستیابی نسبتا مستحکم ہے۔ خوراک کی پیداوار میں مجموعی ترقی کے باوجود معاشرے کا غریب اور مسائل کا شکار طبقہ مناسب اور غذائیت سے بھرپور خوراک خرید نہیں سکتا۔ 

اقوام متحدہ کے ورلڈ فوڈ پروگرام (ڈبلیو ایف پی) کے مطابق، تقریبا 60 فیصد پاکستانی آبادی اچھی اور مناسب غذا سے محروم ہیں جو ان کی غذائی ضروریات کو پورا کر سکے۔ ڈبلیو ایف پی کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 44 فیصد پاکستانی بچے جن کی عمر 5 سال سے کم ہے  دائمی خوراک کی کمی کا شکار ہیں اور 15 فیصد شدید خوراک کی کمی کا شکار ہیں۔ 

اقوام متحدہ نے اس مسئلے پر غور وفکر کے بعد جو حل تجویز کیے ہیں ان میں سے کچھ درج ذیل میں ہیں۔ 

 1- کٹھل 

آپ شاید اس اشنکٹبندیی (tropical ) پھل سے واقف نہیں ہیں، جو سبزی کی طرح بھی کھایا جا سکتا ہے، اور اس کا استعمال تیزی سے بڑھ رہا ہے، اب یہ دنیا کے غیر اشنکٹبندیی حصوں میں بھی مینو ز اور اسٹورز پر دستیاب ہے۔ 

میں کٹھل کے بارے میں بات کر رہا ہوں اس کے ایک درخت سے سالانہ تین ٹن خوراک حاصل کرسکتے ہیں، اور اس کی ساخت گوشت جیسی ہے، یہ پک کر گوشت کا طرح کا ذائقہ اور بھرپور غذائیت رکھتا ہے، جو سبزیاں کھانے والوں کے لیے گوشت کا نعم البدل ہے۔ 

 یہاں اس غیر معمولی خوراک کے بارے کئی سوالات اٹھتے ہیں مثلا کیا کٹھل ایسی چیز ہے جسے خوراک کے طور پر استعمال کیا جاسکتا ہے 

اور کیا یہ غذائیت سے بھرپور ہے اور اس کا ذائقہ کیسا ہے۔ 

کٹھل غذائیت سے بھرپور ہے اور اسے دنیا کی بھوک مٹانے کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے۔ 

2۔ اسپائرولینا

ایک کائی ہے جو زمین پر پائے جانے والا خوراک کے ذریعوں میں سے سب سے بڑا ذریعہ ہے، یہ آسانی سے ہضم ہو جاتی ہے اور قدرتی اینٹی آکسائڈنٹ پر مشتمل ہے، جس کی صحت مند جسم کو ضرورت ہے۔ 

یہ وٹامن، معدنیات، کیروٹینائڈز سے بھرپور ہے اور پروٹین کی کمی کے شکار لوگوں کے لیے یہ نہایت اہمیت کی حامل ہے، 70٪ پروٹین کے مواد کے ساتھ اسپائرولینا فی یونٹ پیداوار کے لخاظ سے سویا بینز سے 20 گنا زیادہ پروٹین، مکئی سے 40 گنا زیادہ، اور بڑے گوشت سے 200 گنا زیادہ پروٹین فراہم کرتی ہے 

 میں نے ذاتی طور پر خوراک کی کمی کو رفع کرنے میں اس کے حیرت انگیز نتائج دیکھے ہیں، دن میں صرف ایک گرام Spirulina خوراک کی کمی کے شکار بچے کو صحت کی طرف لانے کے لئے کافی ہے اور وہ چند ہی ہفتوں میں مکمل صحت یاب ہوسکتا ہے۔ 

اس حیرت انگیز کائی (الجی )کے بارے میں شاندار بات یہ ہے کہ اس کی دستیابی اور پیداوار نہایت مناسب اور فائدہ مند ہے۔ اس کی غذائیت کا آپ اس سے اندازہ لگا سکتے ہیں کہ 100 ایکڑ زمین پر گوشت کے پروٹین کی پیداوار، ایک ایکڑ اسپائرولینا کے پروٹین کی پیداوار جتنی ہے۔ 

اسپائرولینا کی پیداوار حاصل کرنا آسان ہے، 500 ڈالر، ایک ٹینک کی قیمت سے دن میں 150 گرام اسپائرولینا پیدا ہوسکتا ہے، 1974 میں، اقوام متحدہ فوڈ کانفرنس نے اسپائرولینا کو "مستقبل کا بہترین کھانا" قرار دیا۔ 

اسماء طارق

اسماء طارق گجرات کی رہائشی عمر بیس  سال ہے اور ماسڑز کی طالبعلم  ہیں  ۔شوشل اور ڈولپمنٹ اشوز پر  کئی ویب سائٹ اور نیوز پیپر کے لیے  لکھتی   ہیں اور مزید بہتری کےلئے کوشاں   ہیں۔