1. ہوم/
  2. عامر ظہور سرگانہ/
  3. صفحہ 1

ہجوم کا نوحہ

Aamir Zahoor

میں اس بات پر کافی سوچ و بچار کرچکا ہوں کہ ایک ہجوم کا نوحہ لکھنے کا کیا طریقہ ہوسکتا ہے۔ میں حیرت زدہ ہوں کہ اس ہجوم کے لیے نوحہ لکھنا بھی چاہیے کہ نہیں۔ اس ہج

مزید »

مسیحا کے منتظر لوگ

Aamir Zahoor

اس وقت اعداد و شمار کے مطابق دنیا میں قریباََ چھیا سٹھ کے قریب پروجیکٹ کرونا بیماری کا تریاق ڈھونڈنے کے لیے چل رہے ہیں۔ جن میں سات کے قریب "RE-PURPOSED DRUGS"،

مزید »

خوف کے سوداگر

Aamir Zahoor

کچھ دن سے انجانے خوف نے دنیا کو گھیر رکھا ہے۔ ایک وائرس نے تمام نظام زندگی مفلوج کرکے رکھ دیا ہے۔ میرے سمیت بہت سے لوگ اسے انجامِ دنیا تصور میں لاتے ہوئے تھر تھ

مزید »

سراب

Aamir Zahoor

سب کچھ سراب ہے پیارے۔۔عہدِ وفا کے قصے یہ جھوٹی وصل کی باتیں ہیں پندار، بھرم سب کچھسراب ہے پیارےیہ جو ہم اور تم اقرار کرتے ہیں ایک دوسرے سے پیار کرتے ہیں سب شعبد

مزید »

دانش مرگئی

Aamir Zahoor

رومن فلسفی مارکس پورشیس کیٹو سے جب عورتوں سے متعلق بات کی گئی تو اس نے کہا "اچھا تو تم ان کے حقوق کی بات کرلو۔ اگر یہ عورتیں اپنے حقوق میں برابری حاصل کرنے کے م

مزید »

آؤ اس شہر تمنا میں چلیں

Aamir Zahoor

آؤ اس شہر تمنا میں چلیںجہاں اداسیوں کاگمان نہ گزرےایسا شہر جس کےدرو دیواروصالِ یار کے نغمےگنگناتے ہوںجس کی فصیلوں پرآشنائی کے پرچم لہراتے ہوںآؤ اس شہر تمنا میں

مزید »

خام خیالی

Aamir Zahoor

کراچی کی ایک ادبی نشست میں بیٹھا تھا کہ اچانک سے ایک دوست بولے "آپ کو کیا لگتا ہے خان صاحب پانچ سال نکال جائیں گے؟ میں پہلے تو ہنسا پھر اس ناگاہ سوال کا کوئی من

مزید »

نَازو

Aamir Zahoor

جیسے کل ہی کی تو بات تھی نازو نے جوانی کی دہلیز پہ قدم رکھا تھا۔ عنفوانِ شباب میں پورے قصبے میں اس خوبصورت اور جمالی روح کے چرچے تھے۔ شکل و شباہت ایسی کہ پریوں

مزید »

گئی چَوّنی دھیلے مُکے

Aamir Zahoor

گئی چَوّنی دھیلے مُکے اوہ ہٹیاں تے ٹھیلے مُکے کی وساکھی سَاون بَھادوں موجاں مُکیاں ، میلے مُکے پِٹُھو گَرم تے گلُی ڈنڈا سب بچپن دے کھیلے مُکے مُکیاں ڈاراں

مزید »

سرمئی طوطا

Aamir Zahoor

ٹرین کی رفتار اب سرکاری دفاتر میں جاتے سست رو کلرکوں کی سی ہو چلی تھی۔ اکانومی کلاس سے سینکڑوں مسافر باہر تانک جھانک رہے تھے۔ ٹرین خراماں خراماں اپنے اگلے سٹیشن

مزید »