1. ہوم/
  2. کرن رباب نقوی/
  3. صفحہ 1

حد سے بڑھنے لگی ہے خاموشی

Kiran Rubab Naqvi

حد سے بڑھنے لگی ہے خاموشیاَب تو ڈسنے لگی ہے خاموشی شور کرتا نہیں ہے تنگ زرامُجھ سے لڑنے لگی ہے خاموشی ایسا ماحول کر دیا اِس نے اَب کھٹکنے لگی ہے خاموشی

مزید »

ہجر نے یوں اُجاڑ دی آنکھیں

Kiran Rubab Naqvi

ہجر نے یوں اُجاڑ دی آنکھیں جیتے جی جیسے مار دی آنکھیں دِل نے صدقہ اُتارنے کو کہا ہم نے اُس پر سے وار دی آنکھیں ہم نے تو سرسری سا دیکھا تھا تو نے دِل میں ہی

مزید »

آگ در پر تیرے جب آن لگائی زہراؑ

Kiran Rubab Naqvi

آگ در پر تیرے جب آن لگائی زہراؑ ہائے اُمت کو زرا شرم نہ آئی زہراؑ   پُشت پہ بی بیؑ کی دیوار تو دَر جلتا ہوا ہائے جائے تو کہاں جائے ہے گھر جلتا ہوا

مزید »

علیؑ تیرے موالی کو ڈرایا جا نہیں سکتا

Kiran Rubab Naqvi

علیؑ تیرے موالی کو ڈرایا جا نہیں سکتا  کسی اوچھے طریقے سے دبایا جا نہیں سکتا  بہت تسکین ملتی ھے، علیؑ تیری محبت میں نشّہ کیسا ھے دُنیا کو بتایا جا

مزید »

میرے دَرد کا کوئی حل، مُرشد؟

Kiran Rubab Naqvi

میرے دَرد کا کوئی حل، مُرشد؟  کیوں رہتی ہوں بے کل، مُرشد؟  میری نظریں ڈھونڈتی پھرتی ہیں سُکھ چین کا کوئی پل، مُرشد میرے سوئے بھاگ جگا ایسے مچ جائ

مزید »

نِڈھال پڑے پاتال سجن

Kiran Rubab Naqvi

نِڈھال پڑے پاتال سجن  تُو پُوچھ کبھی تو حال سجن  ہمیں اپنے بس میں کر ہی نا لے تیرے دو نینوں کا جال سجن سرکار زمانہ دُشمن ہے سُن, چل جائے نا چال س

مزید »

اِس لیے فکر سے مولاؑ نے بچا رکھا ہے

Kiran Rubab Naqvi

اِس لیے فکر سے مولاؑ نے بچا رکھا ہے  میں نے غازیؑ کا عَلم چھت پہ لگا رکھا ہے  روز ہوتی ہے مُلاقات شہِ مُرسل سے میں نے گھر میں جو عزا خانہ سجا رکھا

مزید »

جان کر نے کو ہوں قُربان، علیؑ وارث ہے

Kiran Rubab Naqvi

جان کر نے کو ہوں قُربان، علیؑ وارث ہے  مُجھ سے کہتا ہے یہ وجدان، علیؑ وارث ہے  موت کے خوف سے گھبرا کے نہ واپس جانا وہ بھی ہو جائے گی آسان، علیؑ وا

مزید »

ہجر میں دردناک وحشت تھی

Kiran Rubab Naqvi

ہجر میں دردناک وحشت تھی ایک اِک پَل مِرا قیامت تھی رُوح تک آبلے اُتر آئے اُس کے لہجے میں وہ تمازّت تھی جسم باقی تھا، دِل فگار ہوا جان جاتی تھی، ایسی حالت

مزید »