Sunday, 15 September 2019

نیلا مرا وجود گھڑی بھر میں کر گیا

Test 2

نیلا مرا وجود گھڑی بھر میں کر گیا وہ زہر کی طرح مرے دل میں اُتر گیا   پلکیں لرز کے رہ گئیں اور دیپ بُجھ گئے الزام اب کی بار بھی آندھی کے سر گیا  

مزید »

عشق سر پر سوار کس کا ھے؟

Test 2

عشق سر پر سوار کس کا ھے؟ وہ ھے دشمن تو یار کس کا ھے جاؤ کہہ دو بُھلا دیا تم نے اب تمھیں انتظار کس کا ھے ؟ جو بھی آیا وہ ہاتھ مَلتا گیا آخرش یہ دیار کس کا ھ

مزید »

عشق کی یہ سزا ہے اور میں ہوں

Test 2

عشق کی یہ سزا ہے اور میں ہوں شامِ فُرقت، دیٌا ہے اور میں ہوں   ترے ہاتھوں میں ہاتھ غیروں کا ضبط کا حوصلہ ہے اور میں ہوں   تُو اکیلا کہاں ہے، تیر

مزید »

جو اس چمن میں یہ گل سر و یاسمن کے ہیں

Test 2

جو اس چمن میں یہ گل سر و یاسمن کے ہیں  یہ جتنے رنگ ہیں سب تیرے پیراہن کے ہیں  یہ سب کرشمہ عرض ہنر اُسے کے ہیں گلوں میں نقش ترے ہی لب و دہن کے ہیں

مزید »

وہ دل کو توڑ گیا بے شعور ایسا تھا

Test 2

وہ دل کو توڑ گیا بے شعور ایسا تھالبوں پہ آ نہیں پایا، قصور ایسا تھاگُلاب ہاتھ سے گر کر زمین بوس ہوانظر کا زاویہ سچ مُچ کے طُور ایسا تھااندھیرے موندھ کے آنکھیں د

مزید »

اپنے ہاتھوں میں لئے خنجرِ قاتل آئے

Test 2

اپنے ہاتھوں میں لئے خنجرِ قاتل آئےخود سے لڑنے کے لئے اپنے مقابل آئےدادِ سر دیتے رہے نخوتِ دستار کے ساتھایسے ایسے بھی یہاں شہرِ مقاتل آئےروز ایک زخم لگاتے ہیں

مزید »

میں کیا ہوں، کون ہوں، یہ بتانے سے میں رہا

Test 2

میں کیا ہوں، کون ہوں، یہ بتانے سے میں رہااَب خود کو خود سے، خود کو ملانے سے میں رہامیں لڑ پڑا ہوں آج خود اپنے خلاف ہیاب درمیاں سے خود کو ہٹانے سے میں رہاہے زند

مزید »

ہمارے خواب سے بہتر ــ خیال بُنتا ھے

Test 2

ہمارے خواب سے بہتر ــ خیال بُنتا ھےعجیب شخص ہے پانی سے جال بُنتا ھےوہ لفظ لفظ میں بُنتا ہے معجزوں کا وجودکہانیاں بھی جو دیکھو، کمال بُنتا ھےعدوکے وار سے بچنا مح

مزید »

تیری آنکھوں میں جو تصویر پرائی دیکھی

Test 2

تیری آنکھوں میں جو تصویر پرائی دیکھیڈوبتا دل ہی نہیں دیکھا، خُدائی دیکھیکتنا سوچا تھا لکھوں خط میں جو گزری دل پربارہا میں نے وہ تحریر مٹائی ، دیکھیشہر والوں نے

مزید »

اللہ رکھی تجھے ہوا کیا ہے

Test 2

اللہ رکھی تجھے ہوا کیا ہے  تیرے اس مرض کی دوا کیا ہے  کیوں مجھے کاٹنے کو دوڑتی ہے یہ نہیں بولتی خطا کیا ہے روز ملتی ہیں گُھرکیاں مجھ کو ایسی چاہت

مزید »